Shayari of Allama Iqbal | Allama Iqbal Ki Shayari in Urdu

Allama Iqbal Ki Behtreen Shayari

kabhi ae haqeeqte muntazir

کبھی اے حقیقت منتظر نظر آ لباس مجاز میں
کہ ہزاروں سجدے تڑپ رہے ہیں مری جبین نیاز میں

Kabhi ae haqiqte muntazir nazar aa libase majaz mein
Kh hazaron sajde trap rahe hain meri jabine niaz mein

*****************

iqbal shayari urdu

Iqbal shayari urdu

ضمیر لالہ مۂ لعل سے ہوا لبریز
اشارہ پاتے ہی صوفی نے توڑ دی پرہیز

Zameer lale meh lal se hoa labraiz
Ishara pate hi Sufi ne tur de perhaiz

*****************

allama iqbal shayari

Allama iqbal shayari

اسے صبح ازل انکار کی جرأت ہوئی کیونکر
مجھے معلوم کیا وہ رازداں تیرا ہے یا میرا

Use shbha azal ankar ki jurat hoi kion ker
Mujhy maloom kia woh raazdan tera ha ya mera

*****************

Allama iqbal ki shayari

Allama iqbal ki shayari

افلاک سے آتا ہے نالوں کا جواب آخر
کرتے ہیں خطاب آخر اٹھتے ہیں حجاب آخر

Aflak se aata hai nalon ka jawab aakhir
Kerte hain khitab aakhir uthte hain hijab aakhir

*****************

allama iqbal best shayari

Allama iqbal best shayari

اے طائر لاہوتی اس رزق سے موت اچھی
جس رزق سے آتی ہو پرواز میں کوتاہی

Ae tahir lahoti is rizaq se maut achi j
Jis rizak se aati ho perwaz mein kotahi

*****************

خدا نے آج تک اس قوم کی حالت نہیں بدلی
نہ ہو جس کو خیال آپ اپنی حالات کے بدلنے کا

Kuda ne aaj tak us qaoom ki halat nahi badli
Na ho jis ko kheyal khud apni halat ke badlne ka

*****************

میر عرب کو آئی ٹھنڈی ہوا جہاں سے
میرا وطن وہی ہے میرا وطن وہی ہے

Mere arab ko aai thandi hawa jahan se
Mera watan wohi ha mera watan wohi ha

*****************

زمام کار اگر مزدور کے ہاتھوں میں ہو پھر کیا
طریق کوہکن میں بھی وہی حیلے ہیں پرویزی

Zamame kar agar mazdoor ke hathon mein ho phir kia
Tariq kohan mein bhi wohi heele hain perwazi

*****************

گرچہ تو زنداني اسباب ہے
قلب کو ليکن ذرا آزاد رکھ

Garch tu zindani asbab ha
Qalab ko lekan zara aazad rakh

*****************

ہوا نہ زور سے اس کے کوئی گریباں چاک
اگرچہ مغربیوں کا جنوں بھی تھا چالاک

Hoa na zor se us ke koi gireban caak
Agarcha maghribaon ka jinon bhi tha chalak

*****************

فطرت نے نہ بخشا مجھے اندیشۂ چالاک
رکھتی ہے مگر طاقت پرواز مری خاک

Fitrat ne na bakhsha mujhy andesha chalak
Rakhti hai magar taqte perwaz meri khak

*****************

کھو نہ جا اس سحر و شام میں اے صاحب ہوش
اک جہاں اور بھی ہے جس میں نہ فردا ہے نہ دوش

Kho na ja is sehar-o-sham mein ae sahib hosh
Ik jahan aur bhi hai jis mein na ferda hai na dosh

*****************

سما سکتا نہیں پہنائے فطرت میں مرا سودا
غلط تھا اے جنوں شاید ترا اندازۂ صحرا

Sama sakta nahi panhae fitrat mein mera suda
Ghlat tha ae janon shahid tera andaz-e-sehra

*****************

جگنو کی روشنی ہے کاشانۂ چمن میں
یا شمع جل رہی ہے پھولوں کی انجمن میں؟

Jugno ki rushni hai kashan-e-chaman mein
Ya shama jal rahi hai pholon ki anjman mein

*****************

الٹ جائیں گی تدبیریں بدل جائیں گی تقدیریں
حقیقت ہے نہیں میرے تخیل کی ہے خلاقی

Ulat jain gi tadbeerain badal jain gi taqdeerain
Haqeeqat hai nahi mere takhyul ki hai khalaqi

*****************

سلطانیٔ جمہور کا آتا ہے زمانہ
جو نقش کہن تم کو نظر آئے مٹا دو

Sultani jamhoor ka aata hai zamana
Jo naqashe kahan tum ko nazar aae mita do

*****************

زندگی کچھ اور شے ہے،علم ہے کچھ اور شے
زندگی سوز جگر ہے ،علم ہے سوز دماغ

Zindgi kuch aur she hai, ilam hai kuch aur she
Zindgi suze jigar hai, ilam hai suze dimagh

*****************

یوں تو سید بھی ہو مرزابھی ہوافغان بھی ہو
تم سبھی کچھ ہو بتاؤ تو مسلماں بھی ہو

Youn tu sayed bhi ho merza bhi ho afghan bhi ho
Tum sabhi kuch ho batao tum musliman bhi ho

*****************

Read More:

Allama Muhammad Iqbal History
Allama Iqbal Philosophy

Add Comment